استخارہ ہم اور سکھ

استخارہ ہم اور سکھ

پریسٹین Preston میں فیکڑی میں کام کے ساتھ ساتھ ہفتہ کے روز پریسٹن کالج میں کمپیوٹر ہارڈ وئیر اسمبلنگ اور انسٹالیشن کورس میں داخلہ لےلیا ونڈو 98آئے ہوئے ابھی کچھ ہی عرصہ ہوا تھا اسلئے Bios کی سیٹینگ کے ساتھ انسٹالیشن ساری dos کی کمانڈ سے کی جاتی تھی کالج میں سینکڑوں کمپیوٹرز پر مشتمل لیب بنی ہوئی تھی
میرا لائیربری سے رشتہ برقرار رہا پہلی بار مولانا سید علی ندوی کی تاریخ دعوت و عزیمت سات جلدیں اور ان کی دیگر کتب پریسٹن میں ہی پڑھیں اردو سیکشن کی تقریبا تمام اہم کتب سے استفادہ کیا جس میں کشمیر کے لیڈر شیخ عبداللہ کی سوانح حیات آتش چنار بھی شامل تھی
پریسٹن میں سکھ قوم کی معصومیت سے آگائی ہوئی
ایک دن بڑے بھائی اعجازاور میں اپنے دوست نوید ہاشمی کے ٹیک آوے پر بیٹھے ہوئے تھے ان کے پاس ایک سکھ ڈلیوری مین کام کرتا تھا
وہ کسی نئی انڈین فلم کی بڑی تعریف کر رہا تھا ہم سے پوچھا تو ہم نے کہا کہ ہمارے فلیٹ میں dvdہی نہی ہے وہ دوسرے دن اپنے گھر سے dvdسیٹ اٹھا لیا کہ لو دیکھ کر واپس کر دینا ہم نے اسکی زندہ دلی کی داد دی
دوسرے دن اسنے پوچھا کہ کسی لگی فلم
اعجاز نے کہا یار فلم میں اسٹوری تو ٹاپ کی تھی مگر کہانی بکواس تھی سکھ ایک منٹ خاموش رہا پھر بولا پا جی اے گل سمجھ نہی آئی
ہم سب ہنس پڑے اور بیچارے کو پھر بھی سمجھ نہی آئی
ایک دن ٹیک وے پر بیٹھے تھے کہ پاکستان سے آئے ایک بزرگ چندے کا ڈبہ اٹھائے اندر داخل ہوئے اور بولے جہلم میں ایک یتیم بچوں کا مدرسہ چلا رہا ہوں یہاں اب دوکانوں سے فنڈ اکھٹا کر رہا ہوں بزرگ ٹیک اوے سے نکل کر ساتھ والی سکھوں کی کپڑوں کی دوکان میں جا گھسے جس کا نام اقبال کلاتھ ہاوس لکھا ہوا تھا اندر جاکر فنڈ مانگا ہم باہر کھڑے دیکھ رہے تھے
سکھ نے کہا بابا جی معاف کرو ہم سکھ ہیں
بزرگ بولے سکھ ہو یا جو کچھ فنڈ دو کچھ نہ کچھ
سکھ نے جان چھوڑانے کےلئے ان کو کچھ ریزگاری دے کر جان چھوڑائی بابا جی کا یتیم خانہ تھا یا نہی مگر بابا جی ڈھٹائی سے مال اکھٹا کئے جارہے تھے حلال حرام سکھ ہندو کی پروا کئے بغیر ،
اس دور میں ہمارے ساتھ رہنے والے روم میٹ جو ہم میں عمر سے آٹھ دس سال بڑے تھےنے ہم سے کہا کہ ایک فیملی ہے کافی مذہبی گھرانہ ہے جو اچھے رشتہ کی تلاش میں ہیں اگر تم راضی ہو تو بات چلاوں ہم نے راضامندی کا اظہار کیا کچھ دنوں بعد ان سے پوچھا کہ بات کا کیا جواب ملا
فرمانے لگے کہ یار لڑکی نے آپ کے استخارہ کیا ہے آپ اس کے خواب میں نہی آئے
اب اس بات کو سوچ کر ہنسی بھی آتی ہے اور رب کا شکر بھی ادا کرتا ہوں کہ انگلینڈ میں منگیتر کی زنجیر سے جکڑا جاتا تو شاید ٹیکسی چلا رہا ہوتا یا کسی ٹیک آوے پر شیف
ایسی کوئی زنجیر نہ ہونے کی وجہ سے اسپین منتقل ہونا آسان ہوا

img_0879

img_0878

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *