لاٹری مافیا اور ایک بہادر پاکستانی

لاٹری مافیا اور ایک بہادر پاکستانی

دینہ سے قرطبہ ہجرت کی داستان قسط چوبیس
————————————–
فون کارڈ فروخت کرنے کےلئے ہفتہ میں دو دن قرطبہ سے بزریعہ ٹرین مالگا جایا کرتا تھا کیونکہ Malaga میں غیر ملکیوں کی آبادی اچھی خاصی تھی جن میں مراکش کے عرب اور نائیجرین اور اسکے علاوہ لاطینی امریکہ کے لوگ شامل تھے
ان دنوں موبائل فون سے بہت کم کالنگ کارڈ چلتے تھے ہمارے پاس جس کارڈ کی ایجنسی تھی وہ موبائل سے بھی مفت ڈائل ہو جاتا اسکی وجہ سے نائجرین کیمیونٹی میں اس کی بڑی ڈیمانڈ بن گئی مالگا میں ان کے PCO میں جب بھی گیا ان کو کمپیوٹر پر بیٹھے لیٹر پرنٹ کرتے یا فیکس کرتے دیکھا یا فون پر انگلش میں باتیں کرتے دیکھا
ان میں اکثریت جعلی لاٹری کا فراڈ کا کاروبار کررہے تھے
کچھ عرصہ بعد مجھے انگلینڈ سے ایک دوست کا فون آیا کہ میری اسپین میں لاٹری نکل آئی ہے میں نے جو پچھلے سال سفر کیا تھا اسپین کا اور مجھے خط آیا ہے جس میں گاڑی کی چابی بھی ہے اس نے نام اور پتہ بتایا اور انہوں نے بتایا کہ اپنی ڈاکومنٹس کی کاپی فیکس کروائی ہیں لاٹری والوں نے ساتھ آفس نمبر دیاہے
ایسا ہے ای میل پاکستان میں بھی ارسال کئے گئے
ان نائجرین کو نیٹ سے بائیوڈیٹا نکالنے کی مہارت حاصل تھی وہ ایسے افراد کا ای میل تلاش کر لیتے تھے جس نے سفر کیا ہو اسطرح وہ اس ائر لائن کا حوالہ دیتے کہ آس کی جانب سے ان کے نام لاٹری نکلی ہے فیکس بھی انہوں نے کمپوٹر سافٹ وئیر سے منسلک کی ہوتی تھی ان کا آفس بھی نہی ہوتا تھا اگر کوئی بندہ فون کرتا تو تو ایک بندہ فون اٹینڈ کرکے ہولڈ کروا کر دوسرے ڈپارٹمنٹ کو کال ٹرانسفر کرنے کا ڈرامہ کرکے ساتھ بیھٹے دوسرے نائجرین کو دے دیتا
میرے ایک دوست پاکستانی کلائینٹ شوکت خان مرحوم کا اپنا PCO تھا جس پر ان کے پاس westren union کمپنی کی ایجنسی بھی تھی جس کے زریعے پیسے پوری دنیا سے وصول کئے اور ارسال کئے جاتے تھے
ایک دفعہ ان کے پاس ایک نائجرین ایک پن نمبر لے کر آیا کے دو ہزار یورو انگلینڈ سے آئے ہیں انہوں نے پن مار کر دیکھا تو پیسے بھیجنے والے کا نام مسلمان اور پاکستانیوں جیسا لگا انہوں نے نائجرین کو ٹال دیا کہ سسٹم میں کوئی مسئلہ ہے دو گھنٹہ بعد پیسے کنفرم کرکے وصول کر لے
نائجرین کے جاتے ہی سسٹم سے انہوں نے انگلینڈ کا فون نمبر نکال کر فون کیا تو آگے سے پاکستانی خاتون نے فون اٹھایا شوکت خان نے ان سے کہا کہ آپ کے خاوند کا فلاں نام ہے خاتون نے کنفرم کیا تو انہوں نے کہا آپ نے دوہزار پونڈ اسپین ارسال کئے ہیں خاتون پریشان ہوگئیں تو شوکت صاحب نے انہیں ساری بات سمجھائی کہ میری بہن یہ سب فراڈ ہے لالچ نہ کریں فورا آدھے گھنٹے میں کینسل کروایں یہاں ایک دفعہ وصول ہو گئے تو پھر ملنے نہی
جب نائجرین دوبارہ pco آیا تو خان صاحب نے کپمیوٹر اس کے سامنے کر دیا جس میں پےمنٹ کینسل لکھا آرہا تھا یوں ایک پاکستانی بے وقوف بننے سے بچ گیا
شوکت خان نے بڑا رسک لے کر اپنے آپ کو خطرہ میں ڈال کر ان کو اس فراڈ سے بچا لیا نائجرین کو زرا سا بھی شک ہو جاتا تو ان کی شامت آجانی تھی
شوکت خان کچھ سال قبل مالگا میں ہی وفات پا گیا رب اس کی مغفرت کرے عجیب آزاد بندہ تھا پینتالس سے اڑتالیس کی عمر تھی اسپین میں آئے دس بارہ سال ہوچکے تھے غیر شادی شدہ تھا میں نے کہا پاکستان جا کر شادی کر آو تو بولا پہلے کاغذ بنانے میں مصروف رہا پھر بہن بھائیوں کی پرورش کی ذمہداری پوری کرتا رہا اب میں عمر میں کسی اپنی ہم عمر سے شادی تو کر سکتا ہوں سترہ اٹھارہ سال کی لڑکی سے نہی کر سکتا میرا کیا پتہ چار سال جئیوں یا پانچ سال
شوکت خان کچھ سال قبل عارضہ قلب میں مبتلا ہو کر اس دنیا سے پردہ کر گیا رب اس کی مغفرت کرئے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *