صوبہ خیبر کے سینئر وزیر بنے ہمارے مہمان

صوبہ خیبر کے سینئر وزیر بنے ہمارے مہمان

دینہ سے قرطبہ ہجرت کی داستان قسط اڑتیس
—————————————-
جون دو ہزار چودہ 2014 میں سوشل میڈیا پر ہمارے دوست فضل حسن ہادی سابق پرسنل سیکڑی قاضی حسین احمد مرحوم جو آجکل ناروےاسلامک سینٹر میں خدمت سرانجام دے رہے ہیں نے رابطہ کرکے بتایا کہ صوبہ خیبر کے سنئیر وزیرو وزیر بلدیات اور جماعت اسلامی کے راہنما برادر عنایت اللہ خان بلدیاتی نظام کے سلسلہ میں منعقد والے ایک کورس میں شرکت کےلئےاسپین آرہے ہیں اور اس کورس کے دوران جو فارغ وقت ہو گا اس میں اسپین کے تاریخی اسلامی مقامات کی سیر میں دلچسپی ہے ان کی
عنائت الللہ خان اعلی تعلیم یافتہ اور با صلاحیت نوجوان ہیں جن کی کارکردگی دیگر تمام وزرا سے زیادہ بہتر ہے کیونکہ یہ پوری پلاننگ سے ہر محکمہ کی خود نگرانی کرتے ہیں
ان کو مسجد قرطبہ اور مدینہ الزرہ کی سیر کروائی اور الحمرہ غرناطہ دیکھایا ان کو پنجاب کے روایتی دیسی ناشتہ چنے اور پراٹھہ سے خدمت کی جس کو ان سمیت انکے سیکٹریز نے خوب انجوائے کیا اسپین کی ورکشاب میں پھیکے کھانے کھا کھا کر وہ تنگ آئے ہوئے تھے اسلئے ہمارے دیسی کھانے انکے لئے کسی نعمت سے کم ثابت نہ ہوئے
بارسلونا میں مقیم پاکستانی کمیونٹی سے ان کی ملاقاتوں اور خطاب کےلئے وہاں کے دوستوں سے رابطہ کیا اور وہاں ان کے فارغ وقت میں بارسلونا قونصلیٹ کے اتاشی جناب اسلم غوری صاحب سے ملاقات اور کمیونٹی کو درپیش مسائل پر ان کو بریفنگ کا اہتمام کیا گیا
اس دوران ان سے خیبر میں جماعت اسلامی اور تحریک انصاف کی حکومت کی کاکردگی کے بارے میں بھی تفصیلی بات چیت ہوئی
ان دنوں وہ نئے بلدیاتی نظام کو وضح کرنے میں مصروف تھے انہوں اس نئے نظام کے متعلق تفصیل سے بتایا کہ اختیارات اور فنڈز کو نچلی سطح پر منتقل کرنے کا یہ نظام ایک بہترین نظام ثابت ہو گا
دوسرا کرپشن کی روک تھام کےلئے اپنائے گئے اقدامات کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ ٹھیکوں کے نظام کو آن لائن کر دیا گیا ہے جس سے شفافیت بڑھ گئی ہے اور اس سے ریوینو میں بھی کئی سو اضافہ ہوا ہے
انکے ساتھ انے والے سرکاری اہلکاروں کے مطابق ان سے پہلی حکومت میں وزیر کی میز پر فائل پہنچانے کےلئے رشوت لی جاتی تھی جو کہ اب بلکل ختم کر دی گئی ہے
جماعت اسلامی کے نوجوان اعلی تعلیم یافتہ وثرنری لیڈر سے براراست ملاقات کرکے خیبر اور پاکستان اور جماعت اسلامی کی سیاست پر سوال جواب کرکے معلومات میں کافی اضافہ ہوا

img_1439

img_1438

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *