کیا پکوڑے ہماری قوم کا من و سلوی ہیں ؟

کیا پکوڑے ہماری قوم کا من و سلوی ہیں ؟

رمضان کے پہلے دن تراویح پڑھنے کے بعد صبح ترجمہ قران پڑھا تاکہ جو قران سنا اس کا مفہوم سمجھ آسکے پہلے چند رکوع تو ایسے ہیں جو کافی دفعہ سنے اور ان کا ترجمہ پڑھا ہوا تھا اسلئے دوران تراویح بھی ان آیات کا ترجمہ و مفہوم ذہن میں خود بخود آتا چلا گیا
جب آیات کا مطلب مفہوم آتا ہو تو قران کو سننے کا مزا مختلف ہوتا ہے بانسبت بنا مفہوم سمجھے
شام کو پہلی افطاری کے وقت دوستوں نے افطاری کےلئے تیاری شروع کی تو سب سے پہلے پکوڑے تیارے کرنے کا منصوبہ بنا
پاکستان اور ہندوستان کے مسلمانوں کےلئے روزے اور پکوڑے لازم و ملزوم ہیں ان کے بنا شاید روزہ کھولنا مکروہ سمجھا جاتا ہے
اس نعمت خداوندی کی درست تاریخ کا علم تو کسی کو نہی معلوم کب اور کہاں سے اس کو دریافت کیا گیا
صبح تلاوت کے وقت آیات کے ترجمہ میں بنی آسرائیل پر رب کی جانب سے نعمتیوں کا ذکر پڑھا تھا جس میں بنی اسرائیل پر من و سلوی نازل کرنے کا ذکر تھا
پکوڑے دیکھ کر میرے ذہن میں وہ آیات گھومنے لگیں
شاید ہماری قوم کےلئے رب نے من و سلوی کی جگہ پکوڑے نازل فرمائے ہیں جسطرح ہماری قوم اس نعمت کو بچوں بوڑھوں کےلئے کھلانے کا اہتمام کرتی ہے اس سے جس طرح محبت کرتی ہے اس گمان کو تقویت ملتی ہے
از قلم فیاض قرطبی

img_2671

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *