Browsed by
Category: Uncategorized

قرطبہ کی ایک حسین عرب دوشیزہ سے اتفاقی ملاقات

قرطبہ کی ایک حسین عرب دوشیزہ سے اتفاقی ملاقات

قرطبہ کی ایک عرب دوشیزہ سے اتفاقی ملاقات
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
قرطبہ شہر کی قدیم گلیوں میں گھومتے ہوئے ایک کتابوں کی دوکان پر رکا اور وہاں رکھی گئی تاریخی کتاب پر نظر دوڑانا شروع ہی کی تھی کہ ایک دراز قد عرب لباس میں دوشیزہ آ کھڑی ہوئی اور مجھ سے مخاطب ہوئی

آپ اندلس کی تاریخی کتب کے شوقین نوجوان لگتے ہیں میں نے جواب میں جی ہاں بس کچھ شغف ہے اپنے آبا کے علمی کتب سے
عرب دوشیزہ نے دو کتب اٹھا کر مجھے تھماتے ہوئے کہا ان دو میں آپ کس دسویں صدی تک لکھی گئی کتب کا حوالہ مل جائے گا
میں نے حیرانگی سے اس کی جانب دیکھا اور پوچھا محترمہ آپ کا تعارف اور آپکو اس قدر کتب کا شغف کیسے
وہ بولی میرا نام لبنی ہے کچھ لوگ اسے لبنا بھی لکھتے ہیں میں خلیفہ عبدالرحمن سوئم اور اسکے بعد اسکے بیٹے الحکم دوئم (915 -976)کی ذاتی مشیر رہی ہوں اور قرطبہ کی شاہی کتب خانہ کی انچارج رہی اسلئے کتب خانہ کےلئے خریدی جانے والی تمام کتب میری منظوری سے خریدی جاتی تھیں بلکہ میں خود دمشق و بغداد کتب خریدنے گئی تھی
میری آنکھیں حیرانگی سے کھلی کی کھلی رہ گئیں
دسویں صدی میں مسلم خلیفہ کی سیکڑی ایک خاتون اور نینشل لائبریری کی انچارج بھی
میں نے لبنی سے پوچھا محترمہ آپ کی کس قابلیت کی بنا پر آپ کو یہ عہدے دئیے گئے تھے کیا شہاہی خاندان کی ممبر تھیں
وہ مسکراہی اور بولی میں تو ایک لونڈی کی اولاد ہوں
مجھے دربار میں جو مقام ملا وہ علم کی بنیاد پر ملا تھا
میرا ریاضی بہت اچھا ہے مشکل سے مشکل الجبرا ہو یا کوئی حساب میں حل کر سکتی ہوں اور اس کے ساتھ میں شاعرہ بھی ہوں اور خطاط بھی
شاہی کتاب خانے کی کئی کتب میں نے اپنے ہاتھ سے کاپی کی ہوئی ہیں میں جب گھر سے نکل کر کتب خانہ جاتی تھی تو شہر کے بچے میرے ساتھ چلتے جاتے تھے راستہ میں میں ان کو گنتی اور جمع تفریق نغموں کی صورت میں پڑھاتی جاتی تھی
میں اس کی باتوں سن کر تخیل میں شاہی کتب خانہ جس میں اس وقت پانج لاکھ کتب تھیں میں پہنچ گیا
جیسے ہی آنکھ جھپکی دوشیزہ غائب ہو گئی

قرطبہ شہر کے بابوں کے بعد اب اندلس کی دوشیزائیں مجھے حیران کرنے لگی ہیں
اب اگلے موڑ پر دیکھتے ہیں کس سے ملاقات ہوتی ہے

فیاض قرطبی

img_0689