بستہ ب کے بدمعاشوں کی فہرست اور ہم

بستہ ب کے بدمعاشوں کی فہرست اور ہم

بستہ ب کے دس نمبر بدمعاشوں کی فہرست میں ہم جیل میں گزرے تین دن (اخری قسط) تیسرے دن جج کے سامنے ہھتکڑیاں لگا کرپیش کئے گئے جج صاحب نے ضمانت منظور کرکے رہا کردیا کچھ دنوں میں پولیس کا ایک اہلکار ہمارے گھر کا پتہ لوگوں سے پوچھتا آ پہنچا ہمیں اس نے تعارف کروایا کہ عدالت نے آپ کا سمن نکالا ہے اور آپ کو جج کے رو برو پیش ہونا ہے ساتھ ہی اس نے یہ کہا…

Read More Read More

جہلم جیل کا پراثر پانی

جہلم جیل کا پراثر پانی

منڈا خانہ میں پندرہ سال سے اٹھارہ سال کے بارہ پندرہ لڑکے تھے یہ نارمل بیرک کی بجائے بڑا ہال تھا اور یہاں بی کلاس کی طرح اپنا کھانا پکانے کی اجازت تھی لیکن سامان اپنا منگوانا پڑتا تھا پیاز سبزی کاٹنے کےلئے چھری کی اجازت نہی اس کی بجائے ایک لوہے کی پتری سے کام چلایا جا رہا تھا ان بچوں میں دو تین تو ایسےخانہ بدوش تھے جو نشئی تھے جن کے پاس سے نشہ برآمد ہونے پر…

Read More Read More

تھانہ کی چورکتیا

تھانہ کی چورکتیا

تھانہ میں چوری کرنے والی کتیا (جیل میں گزرے تین دن قسط نمبر 2) ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تھانہ پہنچے تو انچارج تھانہ کے سامنے سب کی شناخت کی گئی اور کہا گیا بے فکر رہو بڑے آفیسر آتے ہی چھوڑ دئیے جاو گے کچھ دیر بعد وہاں موجود تھانہ کے ایک کمرہ کے حوالات میں بند کر دیا گیا جو زیادہ سے زیادہ چھ سات افراد کےلئے بنا ہوا تھا جبکہ ہم بارہ تیرہ طالبعلم تھے کمرہ کے اندر ہی پیشاب کرنے…

Read More Read More

ہماری جیل میں پہنچنے کی روداد

ہماری جیل میں پہنچنے کی روداد

1994میڑک کے بعد بڑے بھائی جان ریاض نے ہمیں روایتی ایف اے والی تعلیم کی بجائے فنی تعلیم حاصل کرنے کےلئے جہلم کے ووکیشنل کالج میں داخلہ لینے کا مشورہ دیا صبح کی شفٹ میں داخلہ بند ہونے کی بنا پر شام والی شفٹ میں مکینیکل ڈرافٹسمین کے ایک سالہ سرٹیفکیٹ کورس میں داخلہ لیا یہ کالج جہلم کے مشہور جی ٹی ایس چوک اور دریائے جہلم پر انگریز کے بنائے گئے قدیم پل کے درمیان واقع تھا اور اس…

Read More Read More

سات سال کی گڑیا سترہ کی ہو گئی اور پردیسی خالی ہاتھ گھر لوٹا

سات سال کی گڑیا سترہ کی ہو گئی اور پردیسی خالی ہاتھ گھر لوٹا

سن دو ہزار میں جب ہم قرطبہ کے نواحی گاوں بلمس Belmiz میں رہائش پذیر تھے یورپ کے دیگر ممالک سے بھی پاکستانی اسپین پہنچ رہے تھے کیونکہ اسپین نے غیر ملکی افراد کو قانونی دستاویزات دینے کا اعلان کر رکھا تھا اس چھوٹے سے گاوں جس کی آبادی بامشکل چار ہزار نفوس پر مبنی تھی میں تقریبا چالیس کے قریب پاکستانی مختلف ڈیروں میں رہ رہے تھے ان میں پنجاب اور کشمیر کے مختلف شہروں کے لوگ تھے کوئی…

Read More Read More

پی آئی اے PIA کے خسارہ کی وجہ : پاکستانی پیر فقیر ہیں

پی آئی اے PIA کے خسارہ کی وجہ : پاکستانی پیر فقیر ہیں

کچھ برس قبل ایک دوست کا فون آیا کہ ان کے جاننے والے ایک پاکستانی دوست آپ کے شہر قرطبہ میں کسی کمرشل پلازہ میں سنگ مرمر کے بنے نوادارت کا اسٹال لگانے آرہے ہیں ان کی رہائش کا بندوبست کر دیجیے پردیس میں اپنے دیس کے مہمانوں کی میزبانی اور مدد کرنا ہمیشہ سے ہمارے لئے باعث فخر رہا ہے ہمارا پہلا تاثر تو یہ تھا کہ جو کاروباری اسٹائل لگا رہا ہے وہ پیسے والا کاروباری فرد ہو…

Read More Read More

لوٹ اے گردش ایام

لوٹ اے گردش ایام

ہم نے اپنی پرائمری تعلیم گورنمنٹ پرائمری اسکول سے حاصل کی اور قران پاک کا ناظرہ محلہ کی مسجد سے پڑھا پرائمری اسکول میں ہمارے ایک ہم جماعت تھے جو عمر میں ہم دو تین سال بڑھے ہوں گے وہ اسی مسجد میں حفظ کرتے تھے جہاں ہم ناظرہ پڑھنے صبح اسکول جانے سے قبل جاتے تھے ان کو مولوی کے نام سے پکارا جاتا تھا وہ کلاس میں اکثر سوئے پائے جاتے جس پر کلاس ٹیچر سے اکثر ڈانٹ…

Read More Read More

اردو اسپیکنگ مائی اور محلہ کے شرارتی بچے

اردو اسپیکنگ مائی اور محلہ کے شرارتی بچے

بچپن کی عمر میں انسان سب سے زیادہ سیکھتا ہے اور یہ سیکھنے کا عمل اسکول مکتب کے ساتھ ساتھ والدین اور اپنے گلی محلہ میں پیش آنے والے واقعات سب سے جڑا ہوتا ہے ہمارے بچپن کی کچھ حسین یادیں جو ابھی بھی لاشعور میں محفوظ ہیں آج ان میں کچھ آپ کے ساتھ شئیر کرتا ہوں ہمارا محلے میں کراچی سے ایک خاندان آ کر آباد ہوا جن میں ایک بزرک اور ایک بڑی عمر کی خاتون تھیں…

Read More Read More

جگنو اور جزیرہ (اسپینش سے ماخوذ)

جگنو اور جزیرہ (اسپینش سے ماخوذ)

ایک دفعہ کا ذکر کے ایک جزیرہ پر دو جگنو رہتے تھے دونوں آپس میں گہرے دوست تھے دونوں اس جزیرہ پر ایک ساتھ گھومنے جاتے اپنے لئے خوراک تلاش کرتے یہ جزیرہ ایک چھوٹا سا جزیرہ تھا اس لئے جیسے جیسے سردی بڑھتی ان کےلئے خوارک تلاش کرنا مشکل ہوتا جاتا، ان میں سے ایک جگنو نے دوسرے سے کہا کہ آو اس جزیرہ سے باہر نکل کرکوئی اور دنیا تلاش کرنے کی کوشش کرتے ہیں جہاں وافر خوراک…

Read More Read More

مثبت سوچ: مسائل کا حل

مثبت سوچ: مسائل کا حل

اپنی سمت کا تعین کیجیے اور سوچ کو مثبت کیجیے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جدید ترقی یافتہ ممالک سے لے کر ہمارے پاکستانی میں معاشرہ میں جدید سہولیات زندگی آرہی ہیں اور انکے ساتھ جدید مسائل بھی جنم لے رہے ہیں مرد حضرات پر معاشی ضروریات پوری کرنے کا اتنا پریشر ہے اور معاشرہ کے مقتدر لوگوں کے مظالم اور نا انصافیوں سے اسے پالا پڑتا ہےاور یہ دونوں مل کر بعض دفعہ اسے اس قدر مایوس کر دیتی ہیں کہ یا تو…

Read More Read More